سماج

2019 : ٹرمپ کو مواخذے کا خطرہ؟

2016ء میں کئی ماہرین کا اندازہ تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ امریکی صدر نہیں بن پائیں گے۔ سیاسی امور کے ایک ماہر ایلن لشٹمین نےکہا تھا کہ ٹرمپ ہی جیتیں گے۔ لیکن اب ان کا کہنا ہے ٹرمپ کو مواخذے کا سامنا کرنا ہوگا

سوشل میڈیا
سوشل میڈیا

ڈی. ڈبلیو

کیا اگلے برس یعنی 2019ء میں ڈونلڈ ٹرمپ کے رویے میں پہلے کے مقابلے میں کوئی تبدیلی آئے گی؟ شاید نہیں۔ کیا 2019ء میں ان کی سیاست بدل جائے گی؟ اس کی امید بھی کم ہی ہے۔ کیا ڈیموکریٹک پارٹی کی اکثریت والا ایوان نمائندگان ٹرمپ کے خلاف مواخذے کی تحریک شروع کرنے کی کوشش شروع کرے گا؟ اس سوال کا جواب دیتے ہوئے تاریخ دان اور سیاسی امور کے امریکی ماہر ایلن لشٹمین نے کہا، ’’مجھے لگتا ہے کہ اس طرح کی کوئی تحریک شروع کیے جانے کا زیادہ امکان نہیں ہے۔‘‘

ایلن لشٹمین کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ گزشتہ تیس برسوں کے دوران امریکی صدارتی انتخابات کے حوالے سے ان کے اندازے بالکل صحیح ثابت ہوئے ہیں۔ 2016ء کے انتخابات سے قبل ہی ٹرمپ کی جیت کی پیش گوئی کر کے وہ ایک ’میڈیا سٹار‘ بن گئے تھے۔

تاہم اب وہ اس بات کے قائل ہیں کہ صدر ٹرمپ کو 2019ء میں اور اپنی مدت صدارت کے اس کے بعد کے باقی حصے میں بھی اپنے منصب کو بچانے کے لیے بہت زیادہ کوششیں کرنا پڑیں گی۔ ان کے بقول یہ ایک ایسی جنگ ہو گی، جو آخر میں ٹرمپ ہار جائیں گے۔

وہ کہتے ہیں کہ کچھ عرصہ پہلے تک ٹرمپ کو ریپبلکن پارٹی کی اکثریت والی کانگریس کا اعتماد حاصل رہا تھا، جس نے انہیں مواخذےسے بچایا ہوا تھا۔ تاہم نومبر کے اوائل میں وسط مدتی انتخابات کے بعد حالات یکسر تبدیل ہو گئے اور اب ایوان نمائندگان میں ڈیموکریکٹ پارٹی کو اکثریت حاصل ہو چکی ہے۔ اس صورت میں ایک اضافی ووٹ بھی ٹرمپ کے خلاف مواخذے کی تحریک شروع کرنے کے لیے کافی ہو گا۔

اب تک ممکنہ مواخذہ امریکی سیاست میں صرف ایک موضوع ہی تھا تاہم اب یہ حقیقت کا روپ دھار سکتا ہے۔ 2019ء میں تین جنوری کو ایوان نمائندگان کا ڈیموکریٹس کی سربراہی میں پہلا اجلاس ہو گا۔ اب ٹرمپ پر بات چیت کے لیے دباؤ بڑھ بھی سکتا ہے۔

ایلن لشٹمین کے مطابق میولر رپورٹ کے تناظر میں ٹرمپ شدید خطرے میں گھرے ہوئے ہیں۔ روبرٹ میولر امریکا کے وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف بی آئی کے ایک سابق سربراہ ہیں اور انہیں ٹرمپ کی سیاسی مہم کے روس کے ساتھ ممکنہ رابطوں کی تحقیقات کے لیے کچھ عرصہ قبل خصوصی تفتیشی افسر نامزد کیا گیا تھا۔ لشٹمین کے مطابق میولر کے ہاتھ میں کچھ ایسی معلومات ہیں، جنہیں وہ ٹرمپ کی انتخابی مہم کے روس کے ساتھ مبینہ روابط کے معاملے میں اہم شواہد کے طور پر پیش کر سکتے ہیں۔