تنخواہ نہ ملنے پر ملازم نے اپنے ہاتھوں سے کھڑی کردہ عمارت تباہ کر ڈالی

جرمنی ميں پيش آنے والے ايک عجيب و غريب واقعے ميں کام کی اجرت نہ ملنے پر ايک ملازم نے زير تعمير عمارت کو بھاری نقصان پہنچايا۔ نقصان کا حجم پانچ لاکھ يورو بتايا جا رہا ہے۔

تنخواہ نہ ملنے پر ملازم نے اپنے ہاتھوں سے کھڑی کردہ  عمارت تباہ کر ڈالی
تنخواہ نہ ملنے پر ملازم نے اپنے ہاتھوں سے کھڑی کردہ عمارت تباہ کر ڈالی
user

Dw

قصے، کہانيوں کے ليے مغربی جرمنی کے معروف علاقے بليک فاريسٹ کے پاس واقع چھوٹے سے شہر بلوم برگ ميں بدھ اٹھائيس جولائی کو ايک عجيب و غريب واقعہ پيش آيا۔ تعميراتی کام کا ايک ٹھيکيدار اپنے کام کی درست وقت پر اجرت نہ ملنے پر کافی نالاں تھا۔ اتنا نالاں کہ وہ بھاری برکم عمارات منہدم کرنے والے اوزاروں سے ليس گاڑی ميں سوار ہوا اور زير تعمير کمپليکس ميں تباہی مچا ڈالی۔

مذکورہ زير تعمير رہائشی کمپليکس ميں لگ بھگ تيس مکانات ہيں۔ ان سب ہی پر کام جاری تھا۔ ملزم نے اپنی گاڑی ميں سوار ہو کر گاڑی اس طرح چلائی کہ زير تعمير مکانات کے باہری حصے سے جڑی ہر چيز روندتا چلا گيا۔ دروازے، بالکونياں سب برباد ہو گئے۔ دلچسپ بات يہ ہے کہ جس وقت وہ يہ کارروائی کر رہا تھا، محلے کے درجنوں افراد يہ سب کچھ اپنی آنکھوں سے ديکھ رہے تھے۔ يعنی اس عمل کے چشم ديد گواہوں کی بھی کوئی کمی نہيں۔


پوليس کے ترجمان نے اپنے بيان ميں کہا، ''عمارت ميں کوئی موجود نہ تھا ليکن يہ مناظر ديکھنے کے ليے پچاس کے قريب لوگوں کا مجمع لگ گيا تھا۔‘‘

بعدازاں پوليس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر پورے علاقے کو بند کرا ديا۔ اس زير تعمير رہائشی کمپليکس کے گيراج ميں گيس کے سيلنڈر ذخيرہ تھے اور حکام کو خدشہ تھا کہ کہيں ان ميں آگ نہ بھڑک اٹھے۔ ملزم کی کارروائی ميں يہ حصہ بھی بری طرح متاثر ہوا تھا۔ پوليس کے مطابق عمارات کو جو نقصان پہنچا ہے، اس کی ماليت قريب پانچ لاکھ يورو بنتی ہے۔


اپنا غصہ نکالنے اور توڑ پھوڑ کرنے کے بعد مذکورہ شخص اپنی گاڑی ميں بيٹھ کر فرار ہو گيا تھا۔ تاہم کچھ ہی دير بعد اس نے خود کو پوليس کے حوالے کر ديا۔ اس پر پراپرٹی کو نقصان پہنچانے کی فرد جرم عائد کی گئی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔