خبریں

غریب اعلیٰ ذاتوں کو ریزرویشن سے متعلق آئینی ترمیمی بل راجیہ سبھا سے بھی منظور

<br>

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

قومی آوازبیورو

9 Jan 2019, 10:11 PM

غریب اعلیٰ ذاتوں کو ریزرویشن سے متعلق آئینی ترمیمی بل راجیہ سبھا سے بھی منظور

پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس کے 18ویں دن آج راجیہ سبھا میں غریب اعلیٰ ذاتوں کو 10 فیصد ریزرویشن فراہمی سے متعلق آئین کا 124واں ترمیمی بل پیش ہوا جسے بحث کے بعد منظور کر لیا گیا۔ اس بل کو گزشتہ روز لوک سبھا سے بھی منظور کر لیا گیا تھا۔ ریزرویشن کے حق میں 165 جبکہ مخالفت میں 7 ووٹ ڈالے گئے۔

اس سے قبل ریزرویشن بل کو سلیکٹ کمیٹی کے پاس بھیجنے کی قرارداد پر ووٹنگ ہوئی لیکن یہ قرارداد ایوان سے نامنظور کر دی گئی۔ بل کو سلیکٹ کمیٹی کے پاس بھیجنے کے حق میں 18 جبکہ قرارداد کے خلاف 155 ووٹ پڑے۔ ایوان میں کل 174 ارکان موجود رہے۔

9 Jan 2019, 10:08 PM

دلتوں کا ریزرویشن ختم کرے گی مودی حکومت، سنجے سنگھ

عام آدمی پارٹی کے رکن پارلیمنٹ سنجے سنگھ نے کہا کہ اس بل کے تحت حکومنت نے غریب اعلی ذاتوں کو دھوکہ دینے کا کام کیا ہے۔ انہوں نےئ کہا کہ بی جے پی کے راجدھانی میں بیٹھنے والے لوگ دلت مخالفت ہیں اور وہیں سے اس بل کا دتاویز آیا ہے۔ ناگپور کے سربراہ (بھاگوت) یہ کہہ چکے ہیں کہ ریزرویشن ختم ہونا چاہئے اور دلتوں کو رزیرویشن کو ختم کرنے کی منشا کے ساتھ یہ بل لایا گیا ہے۔‘‘ سنجے سنگھ نے تمام سیاستی جماعتوں سے اس بل کو منظور نہ ہونے دینے کی اپیل کی۔

9 Jan 2019, 9:09 PM

حکومت کے بڑے رہنما بار بار ریزرویشن کے جائزہ کی بات کرتے ہیں، پی ایل پونیا

کانگریس کے رکن پارلیمنٹ پی ایل پونیا نے کہا کہ کانگریس پارٹی غیر ریزرو طبقہ کے غریبوں کو ریزرویشن دینے کی حمایت کرتی آئی ہے۔ پونیا نے کہا کہ حکومت کی ریزرویشن پر ٹیڑھی نظر ہے اور ان کے بڑے رہنما بار بار ریزرویشن کے جائزے کی بات کرتے ہیں۔

9 Jan 2019, 8:53 PM

کماری شیلجا نے مودی حکومت کی منشا پر اٹھائے سوال

غریب اعلیٰ ذات افراد کو ریزرویشن فراہم کرنے سے متعلق بل پر راجیہ سبھا میں بحث جاری ہے۔ بحث کے دوران کانگریس رہنما کماری شیلجا نے کہا کہ مودی حکومت نے لوگوں کو گمراہ کیا ہے۔ انہوں نے جلدبازی میں رکن اسمبلی لانے کی منشا پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ حکومت ریزرویشن کو ختم کرنا چاہتی ہے جو کہ آر ایس ایس کا ایجنڈہ رہا ہے۔

شیلجا نے کہا کہ جب سے مودی حکومت اقتدار میں آئی اس وقت بجٹ میں اعلیٰ ذاتوں کے لئے التزام کیوں نہیں کیا گیا۔ اب چناؤ نزدیک آ گیا ہے اس لئے یہ بل لایا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ کانگریس نے اپنے انتخابی منشور میں اس بات کا ذکر کیا تھا۔

شیلجا نے کہا کہ اس بل کے ذریعہ مودی حکومت نے لوگوں کو گمراہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب بھی ریزرویشن کی بات آتی ہے تو عدالت ہمیشہ یہ پوچھتی ہے کہ آپ کس بنیاد پر ریزرویشن دینا چاہتے ہیں۔ انہوں نے حکومت کی منشا پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ حکومت بتائے کہ بیک لاگ نوکریاں کب پُر ہوں گی۔ انہوں نے مرکزی وزیر پاسوان سے سوال کیا کہ آپ پرموشن میں ریزرویشن کو کیسے لاگو کریں گے!

شیلجا نے کہا کہ حکومت کی منشا قطقی ٹھیک نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ آر ایس ایس کا ایجنڈہ ہے، جو کہ ریزرویشن کو ختم کرنا چاہتی ہے۔ کماری شیلجا نے کہا کہ یہ اعلیٰ ذاتوں کے لئے ریزرویشن نہیں بلکہ حکومت کا سیلف ریزرویشن ہے۔

9 Jan 2019, 8:13 PM

این سی پی نے بل لانے کے وقت پر اٹھایا سوال

راجیہ سبھا میں بحث کے دوران بولتے ہوئے این سی پی کے رہنما پرفُل پٹیل نے بل لانے کے وقت پر سوال اٹھایا۔ انہوں نے کہا جب لوک سبھا چناؤ میں صرف دو مہینے ہی باقی رہ گئے ہیں، اس وقت حکومت نے ریزرویشن دینے کا فیصلہ لیا ہے۔ اس سے حکومت کی منشا پر سوال کھڑے ہوتے ہیں۔

غریب اعلیٰ ذاتوں کو ریزرویشن سے متعلق آئینی ترمیمی بل راجیہ سبھا سے بھی منظور
9 Jan 2019, 8:03 PM

اقتصادی بنیاد پر ریزرویشن، مودی حکومت کا ایک اور فریب، بی ایس پی

بحث میں حصہ لیتے ہوئے بی ایس پی نے ریزرویشن بل کو مودی حکومت کا ایک اور چھلاوا قرار دیا ہے۔ بی ایس پی کے رہنما ستیش مشرا نے کہا کہ کچھ وقت بعد اعلیٰ ذاتوں کو بھی معلوم چل جائے گا کہ حکومت نے ان کے ساتھ کتنا بڑا فریب کیا ہے۔

غریب اعلیٰ ذاتوں کو ریزرویشن سے متعلق آئینی ترمیمی بل راجیہ سبھا سے بھی منظور
9 Jan 2019, 6:45 PM

کیا بل لانے سے قبل کوئی ڈیٹا جمع کیا گیا، کپل سبل کا سوال

راجیہ سبھا میں اعلی ذاتوں کو ریزرویشن دینے کے لئے حکومت کی طرف سے لائے گئے ’آئینی ترمیمی بل‘ پر بحث جاری ہے۔ بحث کے دوران کانگریس کے سینئر رہنما کپل سبل نے حکومت سے سوال کیا کہ کیا اس بل کو لانے سے قبل کوئی ڈیٹا جمع کیا گیا ہے؟ کپل سبل نے کہا کہ جتنی نوکریاں پیدا ہو رہی ہیں، اس سے زیادہ ختم کی جا رہی ہیں۔ انہوں نے سوال کیا کہ کیا اپنے فائدہ اور نقصان کے حساب سے اب ہم ائین میں ترمیم کیا کریں گے؟

کپل سبل نے کہا کہ آئین میں ترمیم تو کی جا رہی ہے لیکن حکومت اس بل کو سلیکٹ کمیٹی کے پاس نہیں بھیجنا چاہتی۔ انہوں نے کہا کہ ’’ایک جانب تو 2.5 لاکھ روپے سالانہ کمانے والے کو انکم ٹیکس ادا کرنا پڑتا ہے اور دوسری جانب آپ 8 لاکھ روپے کمانے والے کو غریب بتا رہے ہیں۔ انکم ٹیکس کی حد کو بھی 8 لاکھ کر دینا چاہئے۔‘‘

غریب اعلیٰ ذاتوں کو ریزرویشن سے متعلق آئینی ترمیمی بل راجیہ سبھا سے بھی منظور

کپل سبل نے کہا ،’’ملک کے نوجوان آج نوکری کے لئے ترس رہے ہیں اور وہ موقع انہیں صرف اور صرف ترقی ہونے پر ملیں گے۔‘‘ انہوں نے کہا، ’’آپ کسے بے وقوف بنا رہے ہیں، عوام کے چہرے پر رونق لانے کا یہ راستہ نہیں ہے اور جب تک عوام کے چہرے پر رونق نہیں آئے گی آپ کے چہرے پر بھی رونق نہ آ سکے گی۔‘‘

کپل سبل نے کہا، ’’اس بل کے مطابق 5-10 ہزار کمانے والا دلت خاندان کمزور طبقہ سے وابستہ نہیں ہے جبکہ 8 لاکھ کمانے والا اعلیٰ ذات خاندان کمزور طبقہ سے وابستہ ہے۔‘‘ انہوں ن ے کہا کہ یہ بل سپریم کورٹ کی 9 ججوں کی آئینی بنچ کے خلاف ہے لہذا اس کے لئے آئین میں ترمیم نہیں کی جا سکتی۔‘‘

9 Jan 2019, 8:26 PM

بنیادی حقوق میں تبدیلی کرنے کا پارلیمنٹ کو اختیار: روی شنکر پرساد

قانون و انصاف کے وزیر روی شنکر پرساد نے بدھ کو دستور کے بنیادی ڈھانچے میں تبدیلی کی بات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ایوان کے بنیادی حقوق میں تبدیلی کرنے کا پارلیمنٹ کو اختیار ہے اور اس لئے ہم معاشی طور سے کمزور لوگوں کو دس فیصدی ریزرویشن دینے کے لئے 124ویں ترمیم کے ذریعہ تبدیلی کررہے ہیں۔

پرساد نے راجیہ سبھا میں اس ترمیمی بل پر چل رہی بحث کے دوران مداخلت کرتے ہوئے کہا کہ اس ترمیم کے بعد مرکز میں ہی نہیں بلکہ ریاستوں کو بھی اس کا فائدہ دینا ہوگا اور اس کے لئے مقررہ پیمانوں میں وقتا فوقتا تبدیلی کرنے کا اختیار ریاستوں کے پاس ہوگا۔
انہوں نے اس بل کو تاریخی قرار دیتے ہوئے سبھی سیاسی پارٹیوں سے اس کی کھل کر حمایت کرنے کی بھی اپیل کی۔

غریب اعلیٰ ذاتوں کو ریزرویشن سے متعلق آئینی ترمیمی بل راجیہ سبھا سے بھی منظور
9 Jan 2019, 7:01 PM

حکومت اس بل کو لاکر آئین کے بنیادی ڈھانچے سے کھلواڑ کر ہی ہے: منوج جھا

اعلی ذاتوں کو ریزرویشن فراہمی کے لئے بل پر بحث کے دوران آر جے ڈی کے رہنما منوج جھا نے کہا ’’ریزرویشن دینا ہے تو نجی علاقوں میں بھی دیجئے، وہاں ہاتھ لگانے سے کیوں ڈر رہے ہیں؟ آبادی کے حساب سے ریزرویشن ملنا چاہئے۔‘‘ انہوں نے کہا کہ ’’جھنجھنا اکثر بجتا ہے لیکن اس دور میں یہ حکومت کے پاس ہے جو ہلتا تو رہتا ہے لیکن بجتا نہیں۔‘‘

منوج جھا نے کہا، ’’غریبی کی کوئی ذات نہیں ہوتی یہ کہنا صحیح ہے لیکن یہ بھی سچ ہے کہ ذاتوں میں غریبی ہوتی ہے۔ ایس سی، ایس ٹی اور او بی سی کے لوگ سب سے زیادہ غریب ہیں۔ حکومت دراصل ذات کی بنیاد پر ملنے والے ریزرویشن کو ختم کرنے کے لئے راستہ ہموار کر رہی ہے۔‘‘

انہوں نے مزید کہا کہ اس بل کی ہماری پارٹی مخالفت کرتی ہے۔ ہم سبھی سماجی انصاف والی جماعتیں ہیں اور ہمارے قائد نے ہمیشہ اس کے لئے لڑائی لڑی ہے۔ حکومت اس بل کو لاکر آئین کے بنیادی ڈھانچے کے ساتھ کھلواڑ کر ہی ہے۔

9 Jan 2019, 7:04 PM

بی جے پی ریزرویشن بل کا فائدہ اٹھانا چاہتی ہے، سی پی ایم کے ایم پی ایلا مارن

سی پی ایم کے رکن پارلیمنٹ ایلا مارن کریم نے اعلی ذاتوں کو ریزرویشن پر مبنی آئینی ترمیمی بل پر بحث کے دوران کہا کہ بی جے پی اس بل کا لوک سبھا انتخابات میں فائدہ اٹھانا چاہتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے نوکریاں بڑھی نہیں بلکہ گھٹ گئیں، نوٹ بندی کے بعد روزگار پر بہت برا اثر پڑا ہے۔

9 Jan 2019, 7:06 PM

بل کو سلیکٹ کمیٹی کے پاس بھیجا جائے، ٹی ڈی پی

ٹی ڈی نے بل کی حمایت تو کی لیکن بل کے وقت کو لے کر سوال اٹھائے۔ ٹی ڈی پی کے رکن پارلیمنٹ وائی ایس چودھری نے کہا، ’’حکومت اس بل آخری لمحات میں کیوں لے کر ئی ہے، اسے بہت پہلے لانا چاہئے تھا۔ بل کے لئے پارلیمانی عمل سے کھلواڑ کی گئی ہے، لہذا اسے سلیکٹ کمیٹی کے پاس غور کرنے کے لئے بھیجا جانا چاہئے۔‘‘

9 Jan 2019, 7:09 PM

حکومت جلدبازی میں ریزرویشن پر مبنی بل لے کر آئی ہے، پرسن آچاریہ

بل پر بحث کے دوران بی جے ڈی کے رکن پارلیمنٹ پرسن آچاریہ نے کہا، ’’حکومت کو آخری دن آئی سی یو کی ضرورت پڑ گئی ہے۔ ریزرویشن بل کو لانے کی ہڑبڑی نہیں کرنی چاہئے تھی۔ بل میں کچھ خامیاں ہیں اور اسے عدالت میں چیلنج کیا جا سکتا ہے۔ ہم اس بل کی حمایت کرتے ہیں۔‘‘

9 Jan 2019, 5:09 PM

ریزرویشن بل مودی حکومت کی ناکامی کا اعتراف: ڈیریک او برائن

راجیہ سبھا میں اعلیٰ ذات کے غریب لوگوں کو 10 فیصد ریزرویشن دیے جانے سے متعلق بل پر بحث جاری ہے اور اس دوران ترنمول کانگریس رکن پارلیمنٹ ڈیریک او برائن نے سخت الفاظ میں مودی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ انھوں نے کہا کہ راجیہ سبھا میں کوٹہ بل پیش کیا جانا اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ وہ ملازمت دیے جانے کا اپنا وعدہ پورا کرنے میں ناکام ہوئے ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ مودی حکومت نے جس جلدبازی میں یہ بل لایا ہے اس سے پتہ چلتا ہے کہ اس کی نیت صاف نہیں ہے۔

9 Jan 2019, 4:09 PM

اعلیٰ ذات کو 10 فیصد ریزرویشن بل عدالت میں رَد ہو سکتا ہے: رام گوپال یادو

سماجوادی پارٹی کے رکن پارلیمنٹ رام گوپال یادو نے راجیہ سبھا میں اعلیٰ ذات کو 10 فیصد ریزرویشن دیے جانے سے متعلق بل پر اپنی بات رکھتے ہوئے کہا کہ اس کو عدالت میں چیلنج کیا جا سکتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ سپریم کورٹ نے 50 فیصد ریزرویشن کی اجازت دی ہے لیکن اگر اعلیٰ ذات کو ریزرویشن ملا تو کل ریزرویشن تقریباً 60 فیصد پہنچ جائے گا۔ اس لیے اس تعلق سے مسائل سامنے آ سکتے ہیں۔

9 Jan 2019, 3:09 PM

کسان ریلی: راجستھان کے کسانوں کو تکنیکی اعتبار سے مضبوط بنایا جائے گا... راہل گاندھی

کانگریس صدر راہل گاندھی نے آج راجستھان میں کسان ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ملک میں تبدیلی ہو رہی فضا کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ’’تین ریاستوں میں انتخابات کے جو نتائج برآمد ہوئے ہیں اس سے کسانوں کی طاقت کا اندازی مودی جی کو لگ گیا ہے اور اب عام انتخابات میں کسانوں کی طاقت کا اندازہ پورے ملک کو ہو جائے گا۔‘‘ اسمبلی انتخابات میں کانگریس کو کامیاب بنانے کے لیے کسانوں، نوجوانوں اور مر د وخواتین کا شکریہ ادا کرتے ہوئے راہل گاندھی نے یہ بھی کہا کہ پی ایم مودی نے بڑے بڑے وعدے ضرور کیے تھے لیکن کوئی بھی وعدہ پورا نہیں کیا۔ کانگریس نے اقتدار سنبھالتے ہی سب سے پہلے کسانوں کا قرض معاف کیا اور لوک سبھا انتخاب میں کامیابی ملنے کے بعد پورے مل کے کسانوں کا قرض معاف کیا جائے گا۔

اپنے خطاب کے دوران رافیل گھوٹالہ کا تذکرہ کرتے ہوئے راہل گاندھی نے پی ایم مودی کو پرزور طریقے سے تنقید کا نشانہ بنایا۔ انھوں نے کہا کہ ’’56 انچ کا سینہ رکھنے والا چوکیدار لوک سبھا میں رافیل پر بحث کے دوران ایک منٹ کے لیے بھی حاضر نہیں ہوا۔ جنتا کی عدالت سے چوکیدار ڈر کر بھاگ گیا۔‘‘ انھوں نے مزید کہا کہ ’’چوکیدار نے خاتون وزیر نرملا سیتارمن کو دفاع کے لیے بھیج دیا اور انھوں نے ڈھائی گھنٹے تک تقریر کی لیکن ہم نے ان کے جھوٹ کا پردہ فاش کر دیا۔‘‘

9 Jan 2019, 12:45 PM

راجیہ سبھا میں 10 فیصد ریزرویشن بل پیش، اپوزیشن نے لگایا ’ریزرویشن کے نام پر دھوکہ بند کرو‘ کا نعرہ

راجیہ سبھا میں مرکزی وزیر تھاور چند گہلوت کے ذریعہ اعلیٰ ذات کے غریب لوگوں کو دیے جانے سے متعلق 10 فیصد ریزرویشن بل پیش کیا جس پر ایوان میں زبردست ہنگامہ جاری ہے۔ پہلے تو راجیہ سبھا کی کارروائی ایک دن بڑھانے کے لیے اپوزیشن لیڈران نے اعتراض کیا اور کہا کہ بغیر مشورہ کے ہی حکومت نے یہ فیصلہ لے لیا، بعد ازاں ریزرویشن بل پیش کیے جانے سے قبل جلد بازی میں اس طرح کا بل لانے کے پیچھے حکومت کی منشا پر سوال اٹھایا۔

کانگریس رکن پارلیمنٹ آنند شرما نے کہا کہ کانگریس اس ریزرویشن کے حق میں ہے لیکن بی جے پی کو بتانا چاہیے کہ پونے پانچ سال بعد انھیں اس بل کی یاد کیوں آئی اور ایسی کیا ایمرجنسی تھی کہ آناً فاناً میں یہ بل لایا گیا۔ انھوں نے مزید کہا کہ ’’کوئی بے وقوف نہیں ہے، ہر شخص جان رہا ہے کہ یہ انتخابی حربہ ہے اور بی جے پی کو چاہیے کہ وہ سہرا لینے کی سیاست بند کرے۔‘‘ کئی راجیہ سبھا اراکین نے اس بل سے متعلق تکنیکی پہلوؤں میں موجود خامی کی طرف اشارہ کیا اور کہا کہ جلدبازی میں اس کو پاس نہیں کیا جانا چاہیے۔ ایوان میں اپوزیشن لیڈران کئی بار چیئر کے قریب جا کر اپنی ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے نظر آئے اور بار بار ’ریزرویشن کے نام پر دھوکہ بند کرو‘ کا نعرہ بھی بلند کرتے رہے۔

9 Jan 2019, 12:11 PM

بغیر مشورہ کے راجیہ سبھا کی کارروائی بڑھائے جانے پر اپوزیشن کا ہنگامہ

راجیہ سبھا کے سرمائی اجلاس میں ایک دن کا اضافہ کیے جانے پر اپوزیشن پارٹیوں نے ایوان میں سخت ناراضگی کا اظہار کیا۔ اپوزیشن کا کہنا ہے کہ بغیر ان سے کوئی بات چیت کیے حکومت نے ایوان کی کارروائی کو ایک دن بڑھا دیا جو کسی بھی طرح مناسب نہیں ہے۔ کانگریس رکن پارلیمنٹ آنند شرما نے اس تعلق سے راجیہ سبھا میں کہا کہ ’’اب نوبت یہ آ گئی ہے کہ حکومت اپوزیشن سے بات کرنا بھی پسند نہیں کرتی۔‘‘ انھوں نے مزید کہا کہ ایسے ماحول میں اگر ایوان کی کارروائی نہیں چلتی ہے تو اس کے لیے حکومت ہی ذمہ داری ہوگی۔

اس درمیان مرکزی وزیر مالیات ارون جیٹلی نے اپوزیشن کے اعتراض پر کہا کہ راجیہ سبھا ہنگاموں کی وجہ سے کافی متاثر رہا اس لیے کچھ قوانین پر غور و خوض کے لیے ایک اضافی دن کی ضرورت پڑی اور سرمائی اجلاس کو بڑھایا گیا۔ ارون جیٹلی کے بیان سے اپوزیشن لیڈران متفق نظر نہیں آئے اور انھوں نے کہا کہ اجلاس کی توسیع سے قبل اراکین راجیہ سبھا سے کوئی مشورہ کیوں نہیں کیا گیا۔

9 Jan 2019, 10:09 AM

لوک سبھا سے پاس ہونے کے بعد اعلیٰ ذات ریزرویشن بل آج راجیہ سبھا میں ہوگا پیش

اقتصادی طور پر کمزور اعلیٰ ذات کو 10 فیصد ریزرویشن دینے والا بل آج راجیہ سبھا میں پیش کیا جائے گا۔ مودی حکومت کے ذریعہ عام انتخابات سے قبل اسے ایک بڑا داؤ تصور کیا جا رہا ہے۔ اپوزیشن لیڈران مرکزی حکومت کے اس قدم کو ’جملہ‘ اور انتخابی حربہ قرار دے رہے ہیں۔ یہ بل منگل کو لوک سبھا سے پاس ہو چکا ہے۔ 8 جنوری کو لوک سبھا میں دن بھر اس بل پر بحث کے بعد لوک سبھا کے اراکین نے ووٹنگ کی تھی جس میں 3 کے مقابلے 323 ووٹوں سے یہ بل پاس ہو گیا تھا۔ ووٹنگ کے دوران وزیر اعظم نریندر مودی اور کانگریس صدر راہل گاندھی بھی لوک سبھا میں موجود تھے۔

9 Jan 2019, 8:52 AM

لکھنو: اندھے کی چوکی اور لنگڑا پھاٹک چوک کا نام جلد ہوگا تبدیل

اتر پردیش میں ریلوے اسٹیشن اور شہروں کا نام بدلنے کا سلسلہ تو چل ہی رہا ہے، اب چوک چوراہوں کا نام بھی بدلے جانے کا فیصلہ لیا گیا ہے۔ ویسے تو لکھنو کے حضرت گنج چوراہے کا نام پہلے ہی بدلا جا چکا ہے، لیکن اب یہ سلسلہ دراز ہونے والا ہے۔ امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ بہت جلد لکھنو کے لنگڑا پھاٹک کا نام بھی بدلے گا۔ لکھنو میونسپل کارپوریشن نے یہ قدم اٹھانے کا فیصلہ لیا ہے۔ اس تعلق سے لکھنو میونسپل کارپوریشن کی میئر سنیوکتا پاٹھک کا کہنا ہے کہ اس طرح کے ناموں سے معذور افراد کی ہتک عزتی ہوتی ہے، اس لیے نام بدلے جانے کی کارروائی جلد آگے بڑھائی جائے گی۔