کل فوجیوں کے ساتھ تھا، آج فوجیوں کی سرزمین پر ہوں: وزیر اعظم مودی

وزیر اعظم نریندر مودی نے جمعہ کو کہا کہ میں دیوالی کے موقع پر کل سرحد پر اپنے فوجیوں کے ساتھ تھا اور آج میں ان فوجیوں کی سرزمین پر ہوں

وزیر اعظم نریندر مودی
وزیر اعظم نریندر مودی
user

یو این آئی

دہرادون: وزیر اعظم نریندر مودی نے جمعہ کو کہا کہ میں دیوالی کے موقع پر کل سرحد پر اپنے فوجیوں کے ساتھ تھا اور آج میں ان فوجیوں کی سرزمین پر ہوں۔

آج کیدارناتھ دھام میں پوجا کرنے کے بعد آدی گروشنکراچاریہ کی سمادھی اور مجسمےکی نقاب کشائی اور بنیادی ڈھانچے کے منصوبوں کا افتتاح کرنے کے بعد ایک پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے پی ایم مودی نے کہا، ’میں نے تہواروں کی خوشیاں ملک کے بہادر فوجیوں کے ساتھ بانٹی ہیں۔ 130 کروڑ شہریوں کا پیار اور’ آشیرواد‘لے کر فوج کے جوانوں کے بیچ گیا تھا اور انہی کی سرزمین پر آیا ہوں‘۔

انہوں نے کہا، ’یہ ہندوستان کی روحانی خوشحالی اور وسعت کا ایک بہت ہی ما فوق الفطرت منظر ہے۔ کچھ تجربات اتنے مافوق الفطرت، اتنے لامحدود ہوتے ہیں کہ انھیں لفظوں میں بیان نہیں کیا جا سکتا۔ بابا کیدارناتھ کی پناہ میں آ کرمیرا احساس اسی طرح کا ہوتا ہے‘۔

انہوں نے کہا، ’آج آپ سب آدی شنکراچاریہ کی سمادھی کی دوبارہ قیام کے گواہ بن رہے ہیں۔ آج تمام مٹھوں، 12 جیوترلنگوں، کئی شیوالیوں، شکتی دھام، کئی تیرتھ علاقوں پر ملک کے معزز عظیم شخصیت، قابلِ عبادت شنکراچاریہ روایت سے وابستہ تمام عظیم رشی، منیشی اور کئی شردّالوں بھی ملک کے ہر کونے سے کیدارناتھ کی اس پاکیزہ سر زمین کے ساتھ ہمیں آشیرواد دے رہے ہیں‘۔


وزیر اعظم نے کہا ،’برسوں پہلے یہاں ہونے والا جو نقصان تھا‘ وہ ناقابل تصور تھا۔ جو لوگ یہاں آتے تھے، وہ سوچتے تھے کہ کیا یہ ہمارا کیدار دھام دوبارہ اٹھ کھڑا ہو گا؟ لیکن میری اندرونی آواز کہہ رہی تھی کہ یہ پہلے سے زیادہ آن بان شان کے ساتھ کھڑا ہوگا‘۔

پی ایم مودی نے کہا کہ اس آدی بھومی پر قدیمیت کے ساتھ جدیدیت کا یہ امتزاج، یہ ترقیاتی کام بھگوان شنکر کی مہربانی کا ہی نتیجہ ہیں۔ انہوں نے کہا،’میں ان کوششوں کے لیے اتراکھنڈ حکومت، وزیراعلیٰ دھامی جی کا اور ان کاموں کی ذمہ داری اٹھانے والے تمام لوگوں کابھی شکریہ ادا کرتا ہوں‘۔

انہوں نے کہا کہ سنسکرت میں شنکر کے معنی ہیں ؛’شنکروتی سہ شنکر‘یعنی جو فلاح و بہبود کرے، وہی شنکر ہے۔ اس گرامر کو براہ راست آچاریہ شنکر نے بھی ثابت کردیا۔ ان کی پوری زندگی جتنی غیر معمولی تھی، اتنی ہی زیادہ وہ عام آدمی کی فلاح و بہبود کے لیے وقف تھی‘۔

انہوں نے کہا کہ ایک وقت تھا ‘جب روحانیت کو، دھرم کو دقیانوسی سے جوڑ کر دیکھا جانے لگا تھا۔ لیکن، ہندوستانی فلسفہ تو انسانی فلاح کی بات کرتا ہے اور زندگی کو کمال کی نگاہ سے دیکھتا ہے۔آدی شنکراچاریہ نے سماج کو اس سچائی سے روشناس کرانے کا کام کیا ہے۔

پی ایم مودی نے کہا کہ سرسوتی کنارے پر گھاٹوں کی تعمیر بھی ہو گئی ہے اور منداکنی پر پُل کے ذریعے گروڈچٹّی جانے والی سڑک کو بھی بہتر کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسی طرح اتر پردیش میں کاشی کو بھی زندہ کیا جا رہا ہے۔وہیں وشوناتھ دھام کا کام بسُرعت پایہ تکمیل کو پہنچنے کو ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔