آگرہ کو ناموافق حالات میں دھکیلنے کا ذمہ دار کون! پرینکا گاندھی

پرینکا گاندھی نے اپنے ایک ٹوئٹ میں لکھا تھا کہ آگرہ میں 48 گھنٹوں میں 28 مریضوں کی موت ہوگئی ہے۔ یوپی حکومت کے لئے کتنی شرم کی بات ہے کہ جھوٹے ماڈل کو مشتہر کر کے سچ کو دبانے کی کوشش کی گئی۔

پرینکا گاندھی
پرینکا گاندھی
user

یو این آئی

لکھنؤ: کورونا وائرس سے آگرہ میں ہوئی اموات کے ضمن میں پرینکا گاندھی کے دعوی پر ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ کے نوٹس کے بعد کانگریس جنرل سکریٹری نے منگل کو کووڈ -19 مریضوں کی حالت اور تعداد میں ردوبدل کا الزام لگاتے ہوئے اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ سے اس ضمن میں وضاحت طلب کی ہے۔

کانگریس جنرل سکریٹری نے پیر کو آگرہ میں کورونا متاثرین کے سلسلے میں اپنے ایک ٹوئٹ میں لکھا تھا 'آگرہ میں 48 گھنٹوں میں اسپتال میں داخل 28 مریضوں کی موت ہوگئی ہے۔ یوپی حکومت کے لئے کتنی شرم کی بات ہے کہ جھوٹے ماڈل کو مشتہر کر کے سچ کو دبانے کی کوشش کی گئی۔ حکومت کی 'نوٹیسٹ، نو کورونا پالیسی' پر سوال اٹھے تھے لیکن حکومت نے اس کا کوئی جواب نہیں دیا۔ اگر یوپی حکومت سچ دبا کر کورونا معاملے میں اسی طرح لگاتار لاپرواہی کرتی رہی تو بہت خوفناک نتائج آنے والے ہیں۔

پرینکا گاندھی واڈرا کے بیان کو سرے سے خارج کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ پربھو نارائن سنگھ نے انہیں ایک نوٹس بھیج کر 48 گھنٹوں کے اندر اس پر جواب طلب کیا تھا۔ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ نے لکھا تھا 'ٹوئٹر پر مذکورہ پوسٹ کو دیکھ کر سردست گمراہ کن حالات پیدا ہوئے ہیں۔ جس سے عوام الناس میں یہ پیغام جاتا ہے کہ 48 گھنٹے میں 28 کورونا مثبت مریضوں کی موت ہوگئی ہے۔

اس وقت پورے ملک کے لوگ کورونا انفیکشن کو روکنے کے لئے لڑ رہے ہیں جو کورونا واریئرس، کورونا فائٹرس اور عوام الناس پر منفی اثر اور خوف کا ماحول پیدا کرتا ہے جبکہ سچائی یہ ہے کہ گزشتہ 109 دنوں میں کووڈ۔19 کے اب تک کل 1139 کیس سامنے آئے ہیں۔ جن میں سے 79 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ گزشتہ 48 گھنٹوں میں 28 لوگوں کی موت کی خبرغلط اور بے بنیاد ہے۔ لہذا اس گمراہ کن خبر کی 24 گھنٹوں کے اندر تردید کرنے کو یقینی بنائیں تاکہ اس کورونا کے وقت میں تمام شہریوں اور کسی بھی عہدے پر کام کرنے والے ملازمین کو صحیح حالات کی جانکاری مل سکے اور اس وبا سے لڑنے والے ملازمین کے حوصلے پست نہ ہوں۔

ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ کے نوٹس کے برخلاف پرینکا گاندھی واڈرا نے منگل کو پھر اپنےٹوئٹ میں لکھا 'آگرہ میں کورونا سے مرنے والوں کی شرح دہلی اور ممبئی سے بھی زیادہ ہے۔ یہاں کورونا متاثرین کی شرح اموات 6.8 ہے۔ یہاں کورونا سے جان گنوانے والے 79مریضوں میں سے کل 35 فیصدی یعنی 28 لوگوں کی موت اسپتال میں داخل ہونے کے 48 گھنٹوں کے اندر ہوئی ہے۔ 'آگرہ ماڈل' کا پروپیگنڈہ کر ان ناموافق حالات میں ڈھکیلنے کا ذمہ دار کون ہے۔ وزیر اعلی 48 گھنٹوں کے اندر عوام کو اس ضمن میں وضاحت دیں اور کورونا مریضوں کی حالت اور تعداد میں کی جا رہی ردوبدل پر جوابدہی طے کریں۔

وہیں ریاست کے وزیر توانائی شری کانت شرما نے پرینکا گاندھی واڈرا کے الزام پر طنز کستے ہوئےٹوئٹ کیا 'چین کی مکاری اور چینی وائرس کے خلاف پورا ملک جنگ لڑ رہا ہے لیکن کانگریس چینی راگ الاپ رہی ہے۔ بھائی (راہل) جھوٹے حقائق سے فوج کی حوصلہ شکنی کرنے میں مشغول ہیں اور بہن (پرینکا)جھوٹے اعدادوشمار سے کورونا وارئرس کا۔

next