اتر پردیش: اومیکرون سے متاثرین کی تعداد میں اضافہ

چیف سکریٹری درگا شنکر مشرا نے کورونا کنٹرول سے متعلق نئی ہدایات بھی جاری کی ہیں۔ شبینہ کرفیو کی مدت میں اضافہ سمیت دیگر ہدایات پر عمل درآمد 6 جنوری سے ہوگا۔

اومیکرون، تصویر آئی اے این ایس
اومیکرون، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

لکھنؤ: اترپردیش میں کورونا وائرس کی نئی قسم اومیکرون کے 23 نئے معاملوں کی تصدیق کے بعد اس سے متاثرین کی تعداد ا بڑھ کر 31 ہوگئی ہے۔ ریاست میں منگل کی دیر رات تک اومیکرون کے 23 نئے مریضوں کی شناخت ہوئی تھی۔ اس میں سب سے زیادہ آٹھ مریض لکھنؤ میں ملے ہیں۔ جبکہ میرٹھ میں پانچ، غازی آباد میں تین، مرادآباد میں ایک، آگرہ اور کانپور میں دو۔ دو اور مہاراج گنج میں ایک نئے مریض کی شناخت ہوئی ہے۔ اومیکرون سے متاثرہ مریضوں کی تعداد بڑھنے کے پیش نظر حکومت نے کورونا جانچ اور جینوم سیکوینسنگ کا دائرہ بڑھانے کا حکم دیا ہے۔

وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کی صدارت میں محکمہ صحت کے ماہرین کی مشاورتی کمیٹی کی منگل کی دیر شام ہوئی میٹنگ کے بعد ریاست کے چیف سکریٹری درگا شنکر مشرا نے کورونا کنٹرول سے متعلق نئی ہدایات بھی جاری کی ہیں۔ شبینہ کرفیو کی مدت میں اضافہ سمیت دیگر ہدایات پر عمل درآمد 6 جنوری سے ہوگا۔


کورونا کے اومیکرون ویرینٹ کی جلد شناخب کے لئے لیب کی تعداد میں اضافہ کیا جا رہا ہے۔ اس میں گورکھپور، جھانسی اور غازی آباد کے میڈیکل کالج اور لکھنؤ میں سنجے گاندھی پی جی آئی میں جینوم سیکوینسنگ کا نظم کیا جا رہا ہے۔ ابھی ریاست کے پانچ اسپتالوں میں جینوم سیکوینسنگ کے لئے لیب ہے۔ انفکشن کے کنٹرول کے لئے اسپتالوں میں دواؤں کی فراہمی کو بڑھایا جا رہا ہے۔

اسی ہفتے کورونا کی علامات والے مریضوں کے لئے دوا کٹ کی تقسیم کا بھی آغاز کر دیا جائے گا۔ ریپڈ ریسپانس ٹیم (آر آر ٹی) کی مدد سے کورونا متاثرہ وہ مریض جنہیں گھر پر ہی آئیسولیٹ کیا گیا ہے ان کے صحت کی نگرانی بھی کی جا رہی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔