امریکی عدالت میں شہزادہ اینڈریو کے خلاف جنسی زیادتی کا مقدمہ خارج کرنے کی درخواست مسترد، چلے گا مقدمہ

امریکی عدالت کے فیصلہ پر ورجینیا جیفری نے کہا کہ وہ خوش ہیں کہ پرنس اینڈریو کی اس مقدمہ کو خارج کرنے کی کوشش کو عدالت نے مسترد کر دیا ہے اور اب ان کے خلاف کارروائی ہوگی۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

لندن، برطانوی شہزادہ اینڈریو پرجنسی زیادتی کا مقدمہ امریکہ میں چلے گا، شہزادہ اینڈریو پر مقدمے کا فیصلہ امریکی جج لیوئس کپلان نے کیا۔ خبر رساں ایجنسی کے مطابق امریکی جج نے پرنس اینڈریو کی مقدمہ خارج کرنے کی درخواست کو مسترد کر دیا۔ درخواست مسترد ہونے سے پرنس اینڈریو کے خلاف مقدمہ آگے بڑھنے کی راہ ہموار ہوگئی ہے۔

خبر رساں ایجنسی کا کہنا ہے کہ نیویارک کی عدالت کے جج لیوس کپلن نے پرنس اینڈریو کے خلاف مقدمہ خارج کرنے کی درخواست کو ہر لحاظ سے مسترد کر دیا ہے۔ یاد رہے کہ ورجینیا جیفری نامی خاتون نے برطانوی شہزادہ اینڈریو پر جنسی زیادتی کا الزام عائد کیا تھا۔


شہزادہ اینڈریو کے خلاف جنسی زیادتی کا مقدمہ خارج کرنے کی درخواست مسترد

امریکہ کی ایک عدالت نے برطانوی پرنس اینڈریو کے خلاف جنسی زیادتی کا مقدمہ خارج کرنے کی درخواست کو ہر لحاظ سے مسترد کر دیا۔ برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق پرنس اینڈریو کو 2001 میں ایک خاتون ورجینیا جیفری کے ساتھ جنسی زیادتی کے الزامات پر امریکہ میں مقدمے کا سامنا کرنا پڑے گا۔

رپورٹس کے مطابق پرنس اینڈریو کے وکلاء نے 2009 میں جیفری ایپسٹین کے ساتھ دستخط شدہ ایک معاہدے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس کیس کو خارج کر دینا چاہئے، لیکن نیویارک کے جج لیوس کپلن نے فیصلہ سنایا کہ کیس کی سماعت ہو سکتی ہے۔ خیال رہے ورجینیا جیفری نے پرنس اینڈریو پر جنسی زیادتی کا الزام لگایا تھا جبکہ کیس کے اہم ملزم ایپسٹن نے 2019 میں جیل میں خودکشی کر لی تھی۔


دوسری جانب پرنس اینڈریو نے ان الزامات کو ہمیشہ مسترد کیا، تاہم امریکی عدالت کے فیصلہ کے بعد خیال کیا جا رہا ہے کہ 61 سالہ ڈیوک آف یارک کے خلاف کیس کی سماعت اب اس سال کے آخر میں ہو سکتی ہے۔ امریکی عدالت کے فیصلہ پر ورجینیا جیفری نے کہا کہ وہ خوش ہیں کہ پرنس اینڈریو کی اس مقدمہ کو خارج کرنے کی کوشش کو عدالت نے مسترد کر دیا ہے اور اب ان کے خلاف کارروائی ہوگی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔