کورونا کی تیسری لہر میں بچوں پر خطرہ! ممبئی میں بی ایم سی نے شروع کی تیاری

آدتیہ ٹھاکرے نے کہا کہ گزشتہ سال سے ہمارے جمبو کووڈ کیئر سنٹر میں کووڈ ڈائلیسس اور ماں دیکھ بھال یونٹس بھی ہیں۔ چونکہ وائرس الگ الگ عمر کو متاثر کرتا ہے ایسے میں ہمارا عمل بھی اسی کے مطابق ہونا چاہیے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

کورونا وائرس کی تیسری لہر کے اندیشہ کو دیکھتے ہوئے امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ اس لہر میں بچے بھی بری طرح سے زد میں آ سکتے ہیں۔ اسے دیکھتے ہوئے برہن ممبئی نگر نگم (بی ایم سی) اور مہاراشٹر حکومت مل کر شہر میں چائلڈ ہیلتھ کووڈ دیکھ بھال وارڈ قائم کر رہی ہے۔ کورونا کی تیسری لہر کے اندیشہ کو دیکھتے ہوئے وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے نے گزشتہ ہفتہ ریاست کے سبھی ضلع کلکٹروں اور نگرپالیکا کمشنروں کو مشکل حالات کے لیے تیار رہنے کا حکم دیا ہے۔

مہاراشٹر کے وزیر سیاحت آدتیہ ٹھاکرے، جو ممبئی سٹی ضلع کے محافظ وزیر ہیں، انھوں نے اس سلسلے میں بی ایم سی میئر کشوری پیڈنیکر، ایڈیشنل میونسپل کمشنر سنجیو جیسوال اور دیگر سرکردہ افسران کے ساتھ بات چیت کی ہے۔ انھوں نے بی ایم سی کو اگلی لہر کے اندیشہ والے علاقوں میں الگ الگ پیڈیاٹرک کووڈ کیئر وارڈ بنانے کا مشورہ دیا ہے۔ آدتیہ ٹھاکرے نے کہا کہ گزشتہ سال سے ہمارے جمبو کووڈ دیکھ بھال سنٹرس میں کووڈ ڈائلیسس اور ماں دیکھ بھال یونٹس بھی ہیں۔ جیسا کہ وائرس الگ الگ عمر کے گروپوں کو متاثر کرتا ہے، ہمارا عمل بھی سرگرمی کے ساتھ بدلنا چاہیے۔

عوامی محکمہ صحت کے جدید طبی اعداد و شمار کے مطابق ریاست کے تقریباً دو تہائی انفیکشن کی رپورٹ اب 50 سے کم عمر والے طبقہ میں ہے۔ کل معاملوں میں 22.09 فیصد 31 سے 40 سال والی عمر کے طبقہ میں ہے، 18.15 فیصد 41 سے 50 سال والوں میں اور 17.51 فیصد انفیکشن 21 سے 30 سال کی عمر کے درمیان کے ہیں۔

حالات کو دیکھتے ہوئے ممبئی کے شمالی گوریگاؤں میں جمبو کووڈ کیئر سنٹر میں اطفال طبی کووڈ کیئر وارڈ شروع کیا گیا ہے اور اس میں 700 بیڈ جوڑے جانے کی امید ہے۔ اس میں نوزائیدہ بچہ انٹنسیو طبی یونٹ (این آئی سی یو) اور اطفال انٹنسیو طبی یونٹ (پی آئی سی یو) شامل ہے، جس میں متاثرہ بچوں کے مکمل علاج کے لیے 25 بستروں کی صلاحیت کے ساتھ ایک وقف چائلڈ کیئر کووڈ دیکھ بھال وارڈ شامل ہوگا۔

اس کے علاوہ بی ایم سی چار آکسیجن پلانٹ بنانے اور ریمیڈیسیور اور ٹوسیلیجوماب انجکشن، ماسک، پی پی ای کٹ وگیرہ جیسی دواؤں کے مناسب اسٹاک کو بنائے رکھنے کا منصوبہ بھی بنا رہی ہے تاکہ تیسری لہر آنے پر اس کو روکنے کے لیے ہر سطح پر کوشش کی جا سکے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 04 May 2021, 10:11 PM