کشمیری بچوں پر حملہ نامناسب: آزاد

غلام نبی آزادنے کہا ہے، کشمیر کے لوگ محب وطن ہیں اور ان کا پاکستانیوں کو کھدیڑنے میں اہم رول رہا ہے، ملک کے مختلف حصوں میں زیر تعلیم کشمیری بچوں اور وہاں کے لوگوں پر حملہ کرنا ان کے ساتھ ناانصافی ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

نئی دہلی: کانگریس کے سینئر لیڈر غلا م نبی آزادنے کہا ہے کہ کشمیر کے لوگ حب الوطن ہیں اور پاکستانیوں کو کھدیڑنے میں اہم رول رہا ہے اس لئے ملک کے مختلف حصوں میں پڑھنے والے کشمیری بچوں اور وہاں کے لوگوں پر حملہ کرنا ان کے ساتھ ناانصافی ہے۔

آزاد نے کانگریس ہیڈ کوارٹر میں ہریانہ جنتا دل یو کے لیڈر رام کمل ویر سنگھ کو پارٹی میں شامل کرنے کے لئے جمعرات کو منعقد پروگرام میں کہا کہ 1947 کے اکتوبر میں جب پاکستانیوں نے تقریباً آدھے کشمیر کو قبضے میں کرلیا تھا ۔ بارہ مولہ ضلع اور سری نگر کے ہوائی اڈے سمیت پورے علاقے پر ان کا قبضہ ہوگیا تھا ۔اسی دوران کشمیر کے بہادر لوگوں ںین انہیں سرحد پار کھدیڑنے میں اہم رول ادا کیا تھا۔ کشمیریوں نے آزادی کے بعد سے اب تک مسلسل پولیس اور فوج کے ساتھ کندھے سے کندھا ملا کر دہست گردی اور پاکستانی دراندازوں کا مقابلہ کیا ہے۔ دہشت گرد ان کے گھروں میں داخل ہوجاتے ہیں اور دہشت گردی کی زد میں آکر ان کے خاندان تباہ ہوجاتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جو بچے کشمیر سے بارہ پڑھنے کے لئے آئے ہیں تو اس سے صاف ہے کہ وہ اصل دھارے سے جڑنا چاہتے ہیں اور کشمیر کے دہشت گردی میں شامل نہیں ہونا چاہتے ہیں۔ دہشت گرد نہیں بننا چاہتے ۔ کشمیر سے باہر آکر انہوں نے دہشت گردی بننے کی لالچ کو ٹھکرایا ہے اور کشمیر سے باہر خود کو زیادہ محفوظ سمجھا ہے۔ اگر کشمیری ہونے کی وجہ سے ان کی پٹائی ہوتی ہے تو صاف ہے کہ ان کو دلدل میں گھسیٹا جارہا ہے۔ ان کے ساتھ کسی طرح کی ناانصافی نہیں ہو یہ سب کی ذمہ داری ہے۔

آزاد نے کہا کہ وہ جموں و کشمیر سے راجیہ سبھا کے نمائندے ہیں اور وہاں کے رہنے والے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ دیکھ کر انہیں افسوس ہوا ہے کہ آگرہ میں ایک ہوٹل میں بورڈ لگا ہواہے کہ اس میں کشمیر کے لوگوں کے لئے جگہ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ انگریز اپنے پرائیوٹ مقامات پر ہندوستانیوں کا داخلہ نہیں دیتے تھے لیکن آزادی کے بعد پہلی مرتبہ ایک ہوٹل والے نے اپنے ہی ملک کے شہریوں کو اپنے ہوٹل میں رہنے سے انکار کیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اس کی پورے ملک میں مذمت ہونی چاہئے۔
انہوں نے کہا کہ پلوامہ کے حملے کی ملک کے ہر کونے میں ہر مذہب کے لوگوں نے سخت مذمت کی ہے۔ پورا ملک فوج کے ساتھ ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next