لکھیم پور کھیری تشدد: مرکزی وزیر کے بیٹے کو گرفتار کرنے والے ایس آئی ٹی چیف کا تبادلہ

اتر پردیش کی یوگی حکومت نے لکھیم پور کھیری واقعہ کی جانچ کرنے والے ایس آئی ٹی چیف اوپیندر اگروال سمیت 6 آئی پی ایس افسران کا تبادلہ کر دیا ہے۔

یو پی پولیس، تصویر آئی اے این ایس
یو پی پولیس، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

اتر پردیش کی یوگی حکومت نے لکھیم پور کھیری واقعہ کی جانچ کرنے والے ایس آئی ٹی چیف اوپیندر اگروال سمیت چھ آئی پی ایس افسروں کا تبادلہ کر دیا ہے۔ ابھی تک ڈی جی پی ہیڈکوارٹر سے جڑے رہے اگروال کو ڈی آئی جی دیوی پاٹن رینج بھیجا گیا ہے۔ حالانکہ پولیس ڈی جی پی مکل گویل نے کہا کہ اوپیندر اگروال ایس آئی ٹی کے چیف بنے رہیں گے۔ جمعہ کو ٹرانسفر کیے گئے افسروں میں تین انسپکٹر جنرل رینک کے اور تین ڈپٹی انسپکٹر جنرل رینک کے ہیں۔

ریاستی حکومت کے ذریعہ لکھیم پور کھیری تشدد کی جانچ کے لیے خصوصی جانچ ٹیم (ایس آئی ٹی) کی تشکیل کی گئی تھی، جس میں چار کسانوں سمیت آٹھ لوگ مارے گئے تھے۔ دیگر کا تبادلہ ڈی آئی جی دیوی پاٹن، راکیش سنگھ کو اسی عہدہ پر پریاگ راج میں منتقل کیا گیا ہے، جب کہ آئی جی پریاگ راج کے پی سنگھ نئے آئی جی، ایودھیا رینج ہوں گے۔


ایودھیا رینج کے پولیس انسپکٹر جنرل (آئی جی پی) سنجیو گپتا کو ڈی جی پی ہیڈکوارٹر میں آئی جی لاء اینڈ ایڈمنسٹریشن اور راجیش مودک کو نیا آئی جی بستی رینج بنایا گیا ہے۔ بستی رینج کے آئی جی انل کمار رائے کو اسی عہدہ پر پروونشیل آرمڈ کانسٹبلری (پی اے سی) میں منتقل کیا گیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔