کانگریس کی راجستھان میں فتح، مدھیہ پردیش، چھتیس گڑھ میں بی جے پی سے ٹکر کی امید

راجستھان میں کانگریس کو واضح اکثریت ملتی نظر آرہی ہے جبکہ مدھیہ پردیش اور چھتیس گڑھ میں بھارتیہ جنتاپارٹی کےساتھ اس کی کانٹے کی ٹکر ہے ۔

By یو این آئی

نئی دہلی: پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات جمعہ کو اختتام پزیرہونے کے بعد مختلف ٹیلی ویژن چینلوں اور ایجنسیوں کےایگزٹ پول کے مطابق راجستھان میں کانگریس کو واضح اکثریت ملتی نظر آرہی ہے جبکہ مدھیہ پردیش اور چھتیس گڑھ میں بھارتیہ جنتاپارٹی کےساتھ اس کی کانٹے کی ٹکر ہے۔

ٹائمس ناؤ کے سروے میں 199رکنی راجستھان اسمبلی میں کانگریس کو 105سیٹیں ملنے کی امید ظاہرکی گئی ہے ،جبکہ بی جےپی کو 85سیٹیں ملنے کے آثار ہیں ۔

نیوز 24کے مطابق راجستھان میں کانگریس کو 110سے 120 سیٹیں ملنے کا امکان ہے جبکہ بی جے پی کو 70سے 80کے بیچ اور دیگر پارٹیوں کو 5سے 15کے بیچ سیٹیں ملنے کی امیدہے ۔زی نیوز نے بھی راجستھان میں کانگریس کی جیت کی پیش گوئی کی ہے ۔

انڈیا ٹوڈے کے ایگزٹ پول میں 230رکنی مدھیہ پردیش اسمبلی میں اہم اپوزیشن پارٹی کانگریس کی بی جےپی پر معمولی سبقت دکھائی گئ ہے ۔کانگریس کو 104 سے 122سیٹیں ملنے کی امیدظاہر کی گئ ہے جبکہ بی جے پی کو102سے 122سیٹیں ملنے کا امکان ہے۔

دوسری طرف نیوز 24کے سروے میں کانگریس کو 110سے 120 سیٹوں پر جبکہ بی جے پی کو 98سے 108کے بیچ سیٹوں پر آگے دکھایاگیاہے ۔ٹائمس ناؤنے بی جےپی کو 126سیٹ دلاکر وزیراعلی شیوراج سنگھ چوہان کی چوتھی بار اقتدارمیں واپسی کے اشارے دیے ہیں جبکہ کانگریس کو 89 سیٹیں دی ہیں ۔بی ایس پی کو چھ اور دیگر کو نو سیٹیں دی ہیں۔

چھتیس گڑھ میں ٹائمس ناؤنے بی جے پی کو 46اور انڈیا ٹی وی نے 42سے 50سیٹیں دی ہیں جبکہ کانگریس کو بالترتیب 35اور 45سے 51سیٹیں ملنے کا امکان ظاہر کیاہے ،لیکن نیوز 24نے چھتیس گڑھ میں کانگریس کی واضح اکثریت دکھاتے ہوئے اسے 52سے 51سیٹیں دی ہیں جبکہ بی جےپی کو 36سے 42سیٹیں ملنے کی امیدہے۔