الور گینگ ریپ: متاثرہ خاتون سے راہل گاندھی کی ملاقات، انصاف دلانے کی یقین دہائی

کانگریس صدر راہل گاندھی الور میں اجتماعی آبرو ریزی کا شکار ہوئی خاتون کے اہل خانہ سے ملاقات کے لئے تھانہ غازی پہنچے۔ انہوں نے کہا کہ اس معاملہ پر سیاست نہیں ہونی چاہیے۔

تصویر یو این آئی
تصویر یو این آئی

یو این آئی

الور: کانگریس کے قومی صدر راہل گاندھی نے راجستھان میں الور ضلع کے تھانہ غازی کے نزدیک ایک گاؤں میں اجتماعی آبروریزی کی شکار اہل خانہ سے مل کر انہیں جلد انصاف دلانے کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ مجرموں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

راہل گاندھی نے الور ضلع کے تھانہ غازی کے نزدیک ایک گاؤں میں مذکورہ متاثرہ کے گھر پہنچے۔ ان کے ساتھ راجستھان کے وزیراعلی اشوک گہلوت بھی تھے۔ انہوں نے کہا کہ اس معاملے میں جلد ہی انصاف ملے گا اور جو بھی ذمہ دار ہوں گے ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

الور گینگ ریپ: متاثرہ خاتون سے راہل گاندھی کی  ملاقات، انصاف دلانے کی یقین دہائی

بعد میں راہل گاندھی نے نامہ نگاروں سے کہا کہ ان کے لئے یہ سیاسی مسئلہ نہیں ہے بلکہ سنگین معاملہ ہے۔ حادثے کے بعد انہوں نے وزیراعلی اشوک گہلوت کو فون کیا تھا اور اس معاملے میں ساری جانکاریاں حاصل کی تھیں۔ وہ 15 مئی کو آنا چاہتے تھے لیکن موسم خراب ہونے کی وجہ سے نہیں آپائے۔

راہل گاندھی نے آج تھانہ غازی میں اجتماعی آبروریزی متاثرہ سے ملنے کے بعد صحافیوں کو بتایا کہ متاثرہ خاندان کو انصاف ملے گا اور کسی بھی لڑکی کے ساتھ ایسے واقعات برداشت نہیں کیے جائیں گے۔ انہوں نے اپنے دورہ کو سیاست سے متاثر بتائے جانے سے انکار کرتے ہوئے کہا ’’میرے لئے یہ معاملہ جذباتی مسئلہ ہے، اس میں کوئی سیاست نہیں ہونی چاہیے، نہ ہی میں یہاں سیاست کرنے آیا ہوں۔ میں نے جیسے ہی اس واقعہ کے بارے میں سنا، تب میں نے فوری طور پر وزیر اعلی اشوک گہلوت سے بات کی اور فوری کارروائی کی ہدایت دی‘‘۔

الور گینگ ریپ: متاثرہ خاتون سے راہل گاندھی کی  ملاقات، انصاف دلانے کی یقین دہائی

راہل گاندھی نے کہا کہ انہوں نے بہت سی چیزیں بتائی ہیں، جن کا میں یہاں ذکر کرنا نہیں چاہتا، وہ جلد انصاف کا مطالبہ کر رہے ہیں، جو انہیں ملے گا۔ انہوں نے کہا ’’اس واقعہ کے بعد میں فوراً آنا چاہ رہا تھا، لیکن کچھ وجوہات کی بنا پر آنہیں پایا‘‘۔ انہوں نے کہا کہ الور یا ہندوستان کے کسی بھی کونے میں ایسے واقعات نہیں ہونے چاہیے۔ متاثرہ خاندان کو انصاف ملے گا اور قصورواروں کو سزا ملے گی۔

وزیر اعلی گہلوت نے اس واقعہ کو سیاسی وجوہات سے چھپانے کے وزیر اعظم نریندر مودی کے الزام کو غلط قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس معاملے میں ایف آئی آر درج ہونے کے بعد فوری طور پر کارروائی کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ اس کے بعد ہم نے پولس کو ہدایات دی کہ تھانوں میں ایف آئی آر درج نہیں ہونے پر پولس سپرنٹنڈنٹ کے دفتر میں ایف آئی آر درج کرائی جا سکتی ہے۔ ریاست میں خواتین سے متعلق اس طرح کے معاملات کی تحقیقات پولس کے سرکل افسر سطح کے افسر كریں گے۔ راہل گاندھی اور اشوک گہلوت نے متاثرہ خاندان کو نوکری دینے کا بھی یقین دلایا۔