سپریم کورٹ میں وکلاء کے چیمبر کھلے، طاق و جفت منصوبہ کا مشورہ

سپریم کورٹ کے وکلاء کے لئے اچھی خبر ہے۔ اب یہ وکیل تقریبا دو ماہ بعد دوبارہ اپنا چیمبر میں 10 سے چار بجے تک طاق جفت منصوبہ کی بنیاد پر کام کاج کر سکتے ہیں

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

نئی دہلی: سپریم کورٹ کے وکلاء کے لئے اچھی خبر ہے۔ اب یہ وکیل تقریبا دو ماہ بعد دوبارہ اپنا چیمبر میں 10 سے چار بجے تک طاق جفت منصوبہ کی بنیاد پر کام کاج کر سکتے ہیں۔

عدالت عظمی نے چیمبر بلاک میں آنے والے تمام لوگوں کے لئے کچھ ہدایات جاری کئے ہیں، جس میں کہا گیا ہے کہبھیڑ بھاڑ سے بچنے کے لئے ہر چیمبر ’طاق جفت‘ منصوبہ کے تحت کھلیں گے۔ اس کے لئے عدالت عظمی نے سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن (ایس سی بی اے) اور سپریم کورٹ ایڈوکیٹ آن ریکارڈ (ایس سی اے او آر اے) کو مشترکہ طور پر تیار کرنے کو کہا ہے۔

وکلاء اور ان کے ملازمین کو پیر سے جمعہ تک صبح 10 بجے سے شام 4 بجے اور ہفتہ کو صبح 10 بجے سے دوپہر دو بجے تک رسائی کی اجازت ہو گی۔ اس کے بعد بلاک کی صفائی ہو گی۔ اتوار اور چھٹیوں کے دنوں میں بلاک صفائی اور حفظان صحت کے لئے بند رہیں گے۔ وکلاء کے چیمبر بلاک میں صرف وکلاء اور ان کے اسٹاف کو شناختی کارڈ یا اجازت نامہ دکھانے پر ہی داخلہ کی اجازت ہوگی۔ جنہیں تھرمل-اسکریننگ سے گزرنا ہوگا اور ایک فارم بھرنا ہوگا رجسٹری میں انٹری کرنی ہوگی۔اس شرط پر عمل نہ کرنے پر کسی کوبھی چیمبر بلاک میں داخل ہونے سے روک دیا جائے گا۔

آٹھ نکاتی ہدایات کے مطابق، تھرمل اسکریننگ کے دوران علامات پائے جانے والے اور ماسک نہ پہننے والے افراد کو بلاک میں داخلہ سے محروم کیا جائے گا۔ ہر بلاک میں ایک انٹری پوائنٹ گے، جسے رجسٹری کی طرف سے فراہم کیا گیا ینٹائزر مشین لگی ہوگی اور ایس سی بی اے / ایس سی اے او آر اے کی طرف سے مجازاہلکاروں اور سپریم کورٹ سکیورٹی ملازمین کی طرف سے اس کا آپریشن کیا جائے گا۔

    Published: 22 May 2020, 11:11 PM