نیرو مودی کا پاسپورٹ منسوخ، پھر بھی 3 ممالک کا کیا سفر

وزارت خارجہ کی طرف سے پاسپورٹ منسوخ کئے جانے کے باوجود پی این بی گھوٹالے کا اہم ملزم نیرو مودی تین ممالک کا چار بار سفر کرچکا ہے، ہندوستانی ایجنسیوں کو لکھے خط میں انٹرپول نے یہ معلومات فراہم کیں ہیں۔

پنجاب نیشنل بینک کو 13 ہزار کروڑ سے زیادہ کا چونا لگانے والا مفرور ڈائمنڈ کاروباری نیرو مودی بیرون ملک میں موج مستی کر رہا ہے، جبکہ مودی حکومت نیرو مودی کو جلد قانون کی گرفت میں لانے کے بڑے بڑے دعوے کر رہی ہے۔

نیرو مودی ہندوستانی وزارت خارجہ کی طرف سے 24 فروری کو پاسپورٹ منسوخ کئے جانے کے باوجود تین ممالک کا 4 بار سفر کر چکا ہے۔ حیرانی کی بات یہ ہے کہ دیگر ممالک سے اچھے تعلقات کا دعوی کرنے والی مودی حکومت کو اس کی بھنک تک نہیں لگی۔ 5 جون کو ہندوستانی ایجنسیوں کو لکھے خط میں انٹرپول نے یہ معلومات دی ہے۔

انٹرپول کے مطابق، نیرو مودی نے 15 مارچ، 28 مارچ، 30 مارچ اور 31 مارچ کو ہندوستانی پاسپورٹ پر امریکہ، برطانیہ اور ہانگ كانگ کا سفر کیا۔ انٹرپول نے یہ خط سی بی آئی کی جانب سے جاری اس نوٹس کے جواب میں لکھا ہے، جس میں انٹرپول سے نیرو مودی کے بارے میں پتہ لگانے کی اپیل کی گئی تھی۔

اس دوران سی بی آئی نے نیرو مودی اور میہل چوكسی کے ساتھ نیرو مودی کے بھائی نشال اور اس کی کمپنی کے ایک ایگزیکٹیو سبھاش پرب کے خلاف انٹرپول سے ریڈ کارنر نوٹس جاری کرنے کی اپیل کی ہے۔

نیرو مودی اور میہل چوكسی کے خلاف جنوری ماہ میں سرکاری بینک پی این بی کے ساتھ 13،500 کروڑ روپے کی دھوکہ دہی کرنے کی شکایت درج کرائی گئی تھی۔ الزام ہے کہ دونوں نے فرضی لیٹر آف انڈر تیکنگ کے ذریعے بینک سے یہ رقم حاصل کی تھی۔

گھوٹالہ کے سامنے آنے کے بعد نیرو مودی اور اس کا ماموں میہل چوكسی جنوری کے مہینے میں ہی ملک چھوڑ کر فرار ہو گئے تھے، بتایا جا رہا ہے کہ نیرو مودی فی الحال برطانیہ میں ہےاور میہل چوكسی امریکہ میں مقیم ہے۔

سب سے زیادہ مقبول