آگرہ میں 8 مور مردہ حالت میں برآمد

اتر پردیش کے آگرہ ضلع کے لالاؤ گاؤں میں ایک کھیت سے 8 مور مردہ حالت میں پائے گئے ہیں، ابتدائی تفتیش میں اشارے ملے ہیں کہ کھیت میں کیڑے مارنے کی دوا کے چھڑکاؤ کے سبب ان کی جان گئی ہے

آگرہ میں موروں کی موت / آئی اے این ایس
آگرہ میں موروں کی موت / آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

آگرہ: اتر پردیش کے آگرہ ضلع کے لالاؤ گاؤں میں ایک کھیت سے 8 مور مردہ حالت میں پائے گئے ہیں۔ ابتدائی تفتیش میں اشارے ملے ہیں کہ کسانوں نے کھیت میں کیڑے مارنے کی دوا کا چھڑکاؤ کیا تھا، جس سے موروں کی موت واقع ہوئی ہوگی۔ عہدیداران نے کہا کہ جانوروں کے لگاتار کئی دنوں تک کیڑے مارنے کی دوا والے اناج کو کھانے سے ایسا ہو سکتا ہے۔

نیشنل چمبل سینکچری کے ڈویژنل فارسٹ آفیسر (ڈی ایف او) دیواکر سریواستو نے کہا کہ موروں کی لاشوں کو پوسٹ مارٹم کے لیے بریلی میں انڈین ویٹرنری ریسرچ انسٹی ٹیوٹ بھیج دیا گیا ہے تاکہ ان کی موت کی وجہ معلوم کی جا سکے۔ اس کی رپورٹ آنا ابھی باقی ہے۔

دریں اثناء مور کی ہلاکت پر نامعلوم افراد کے خلاف وائلڈ لائف پروٹیکشن ایکٹ کی مختلف دفعات کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔