آئی پی ایل کے انعقاد پر سوچنا جلد بازی: بی سی سی آئی

ہندستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ (بی سی سی آئی) کا کہنا ہے کہ موجودہ حالات میں آئی پی ایل کے انعقاد کے بارے میں سوچنا جلد بازی ہوگی

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

ممبئی: کورونا وائرس کی وجہ سے ملک بھر میں جاری لاک ڈاؤن کے درمیان اسپورٹس کمپلیکس اور اسٹیڈیم کو مشروط کھولنے کی اجازت کے باوجود ہندستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ (بی سی سی آئی) کا کہنا ہے کہ موجودہ حالات میں آئی پی ایل کے انعقاد کے بارے میں سوچنا جلد بازی ہوگی۔

حکومت نے اتوار کو ملک بھر میں لاک ڈاؤن کو 31 مئی تک بڑھانے کا اعلان کیا تھا۔ وزارت داخلہ نے ہدایات جاری کرتے ہوئے بتایا تھا کہ لاک ڈاؤن کے باوجود ملک بھر میں اسپورٹس کمپلیکس اور اسٹیڈیم ناظرین کے بغیر کھولے جا سکتے ہیں۔اگرچہ اس دوران ایسے ٹورنامنٹوں کے انعقاد پر روک برقرار ہے جس میں بڑی تعداد میں ناظرین کی بھیڑ کا امکان ہے۔ بی سی سی آئی نے حکومت کے اس حکم کا خیر مقدم کیا ہے۔

بی سی سی آئی کے خزانچی ارون دھومل نے پیر کو کہا کہ اگرچہ حکومت نے اسٹیڈیم کھولنے کی اجازت دی ہے لیکن ملک بھر میں 31 مئی تک ہوائی سفر پر پابندی لگی ہوئی ہے اور موجودہ حالات میں آئی پی ایل کے 13 ویں سیزن کو منعقد کرنے کے بارے میں سوچنا جلد بازی ہوگی ۔قابل ذکر ہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے ملک بھر میں جاری لاک ڈاؤن اور غیر ملکی مسافروں کے آنے پر پابندی کے بعد بی سی سی آئی نے اپریل میں آئی پی ایل کو غیر معینہ مدت کے لئے ملتوی کر دیا تھا۔

یہ پوچھے جانے پر کہ کیا بی سی سی آئی اس سال آئی پی ایل کے انعقاد کے بارے میں غور کر رہی ہے، دھومل نے کہا کہ موجودہ حالات میں ٹورنامنٹ کے انعقاد کے بارے میں سوچنا جلد بازی ہوگی۔انہوں نے کہا کہ دنیا بھر میں غیر ملکی دوروں پر پابندی ہٹنے کے بعد کرکٹ كلینڈر کو دیکھتے ہوئے آئی پی ایل کے لئے ونڈو دیکھنا ہوگی ۔اس دوران آئی پی ایل کی فرنچائز ٹیمیں اس کے انعقاد کے تعلق سے بی سی سی آئی کے فیصلے کا انتظار کر رہی ہیں۔

آئی پی ایل کی ایک فرنچائز کے چیف ایگزیکٹو آفیسر نے کہا کہ حکومت کے حکم سے بی سی سی آئی پر اثر پڑے گا اور اس سے آئی پی ایل کے انعقاد کے لئے مثبت پوزیشن بنے گی۔ ہندستانی ٹیم کو جولائی میں سری لنکا کا بھی دورہ کرنا ہے جہاں اسے تین ون ڈے اور ٹی -20 میچوں کی سیریز کھیلنی ہے۔دھومل نے کہا کہ سری لنکا کرکٹ نے اس سلسلے میں بی سی سی آئی کو خط لکھ کر اس سیریز کی میزبانی کی خواہش ظاہر کی ہے لیکن حکومت کی ہدایات کے بغیر اب یہ کہہ پانا ممکن نہیں ہے کہ ٹیم اس سیریز کے لئے سری لنکا جا پائے گی یا نہیں۔