پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں کے داموں سے عوام کا جینا محال، مسلسل چوتھے روز بھی اضافہ

بین الاقوامی مارکیٹ میں خام تیل میں گزشتہ روز رہی تیزی کے درمیان جمعہ کو مسلسل چوتھے دن گھریلو سطح پر پٹرول 30 پیسے فی لیٹر اور ڈیزل 35 پیسے فی لیٹر مہنگا ہو گیا

پٹرول ڈیزل / تصویر یو این آئی
پٹرول ڈیزل / تصویر یو این آئی
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: پٹرولیم مصنوعات کی بڑھتی قیمتوں سے پہلے سے پریشان عوام کو جمعہ کے روز پھر سے جھٹکا لگا جب پٹرول کے داموں میں 30 پیسے اور ڈیزل کے داموں میں 35 پیسے فی لیٹر کا اضافہ کر دیا گیا۔ اس اضافے کے بعد دہلی میں پٹرول 103.54 روپے فی لیٹر اور ڈیزل 92.12 روپے فی لیٹر تک پہنچ گیا۔ ممبئی میں پٹرول 109 روپے اور ڈیزل 100 روپے فی لیٹر کے قریب پہنچ گیا۔

مسلسل چار دنوں کی تیزی کے بعد اس ہفتے کے پہلے دن پیر کے روزان دونوں کی قیمتوں میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی تھی لیکن منگل سے ان دونوں کی قیمتوں میں اضافہ کیا جا رہا ہے۔ دارالحکومت دہلی میں ان کی قیمتیں اب تک کی ریکارڈ سطح پر پہنچ چکی ہیں۔ اس اضافے کے بعد دارالحکومت دہلی میں پٹرول اب تک کی تاریخی بلند ترین سطح پر 103.54 روپے فی لیٹر اور ڈیزل 92.12 روپے فی لیٹر پہنچ گیا۔ گزشتہ نو دنوں میں پٹرول 2.35 روپے مہنگا ہوچکا ہے۔ ڈیزل بھی 13 دنوں میں 3.50 روپے فی لیٹر مہنگا ہوا ہے۔


پٹرولیم مصنوعات کے اضافہ کا سبب بین الاقوامی سطح پر خام تیل کے داموں میں اضافہ کو قرار دیا جا رہا، تاہم یہ حقیقت بھی کسی سے چھپی نہیں ہے کہ حکومت پٹرول اور ڈیزل کے داموں کے ساتھ بڑے پیمانے پر ایکسائز ڈیوٹی عائد کرتی ہے۔ اگر حکومت ٹیکس میں کچھ رعایت فراہم کرے تو قیمتوں کو مستحکم رکھا جا سکتا ہے لیکن ایسا نہیں کیا جاتا۔ یہاں تک کہ جب خام تیل کے داموں میں گراوٹ آتی تو بھی اس کے تناسب میں گھریلو بازار میں ایندھن کی قیمتوں میں کمی نہیں کی جاتی ہے اور عوام کا جینا محال ہو گیا ہے۔

اوپیک ممالک کے اجلاس میں یومیہ چار لاکھ بیرل تیل کی پیداوار بڑھانے کا فیصلہ کیا گیا تھا جبکہ کورونا کے بعد عالمی سطح پر اس کی مانگ میں زبردست اضافہ دیکھا جا رہا ہے۔ اس فیصلے کے بعد سے ہی بین الاقوامی مارکیٹ میں خام تیل میں زبردست اضافہ ہوا ہے اور یہ سات سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا ہے۔


پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں کا یومیہ جائزہ لیا جاتا ہے اور اسی بنیاد پر ہر روز صبح 6 بجے سے نئی قیمتیں لاگو کی جاتی ہیں ۔ ملک کے چار بڑے شہروں میں پٹرول اور ڈیزل کی قمیمتیں مندرجہ ذیل ہیں:

شہر —————— پٹرول —————— ڈیزل

دہلی ————— 103.54 ————— 92.12

ممبئی ————— 109.54 ————— 99.92

چنئی ————— 101.01 ————— 96.60

کولکاتا ————— 104.23 ————— 95.23

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔